دنیا

کورونا وائرس کا بحران گرمیوں میں بھی جاری رہنے کا عندیہ

امریکی مطالعے کے مطابق کرونا وائرس کا بحران گرمیوں میں بھی جاری رہے گا

امریکی ریاستہائے متحدہ میں پرنسٹن یونیورسٹی کے محققین نے “سائنس” جریدے میں شائع ہونے والی ایک تحقیق سے یہ نتیجہ اخذ کیا ہے کہ موسم گرما میں بھی شمالی نصف کرہ ارض کو کوڈ 19 وبا سے بچانا ناممکن ہے۔

حالیہ مہینوں میں کئے گئے شماریاتی مطالعات نے آب و ہوا اور وبائی امور کے مابین رابطہ قائم کرتے ہوئے یہ نتائج اخذ کئے تھے کہ ممکن ہے درجہ حرارت میں ذیادتی اور نمی میں کمی کے باعث ممکن ہے وبا پر قابو پا لیا جائے تاہم یہ نتائج ابھی ابتدائی ہیں اور کرونا وائرس کے حیاتیاتی روابط اور بنیادی سبب کا انکشاف اب تک نہیں ہوسکا ہے۔ تاہم سائنس میگزین کے ذریعہ شائع کردہ اس لنک کو مکمل طور پر خارج نہیں کیا جاسکتا اور وہ فی الحال سائینسدان اس کو بہت اہمیت دیتے ہیں۔

View this post on Instagram

دراسة أميركية: "كورونا" مستمر في انتشاره خلال الصيف . . . خلص باحثون في جامعة برينستون الأميركية في دراسة نشرتها مجلة "ساينس"العلمية، إلى أن الحر في فصل الصيف لن يكون كفيلا وحده بإنقاذ النصف الشمالي من الكرة الأرضية من وباء كوفيد-19. وكانت دراسات إحصائية أجريت في الأشهر الأخيرة، أقامت رابطا طفيفا بين المناخ والوباء. فكلما ارتفعت الحرارة والرطوبة كلما تراجع انتشار الفيروس. إلا أن هذه النتائج لا تزال تمهيدية ولم يكشف بعد أساس الرابط البيولوجي بين المناح وفيروس كورونا المستجد المسبب لمرض كوفيد-19. ونماذج المحاكاة التي نشرتها مجلة "ساينس" لا تستبعد هذا الرابط كليا لكنها تعتبره من دون أهمية كبرى راهنا. وقالت المعدة الرئيسية للدراسة رايشتل بايكر الباحثة في برينستون في بيان صادر عن الجامعة: "نرى أن المناخات الأكثر حرا ورطوبة لن تبطئ الفيروس في المراحل الأولى من الجائحة". ويلعب المناخ وخصوصا الرطوبة دورا في انتشار فيروسات كورونا أخرى والإنلفونزا إلا ان هذا العامل يتوقع أن يكون محدودا مقارنة مع عامل آخر أهم بكثير مع الوباء الحالي وهو المناعة الجماعية الضعيفة حدا حيال فيروس كورونا المستجد. ويرى الباحثون أن عدد الأشخاص الذين لم يصابوا بالفيروس لا يزال مرتفعا جدا لضمان انتشار سريع له. . . . للمزيد من التفاصيل يرجى زيارة موقع الأنباء الالكتروني: http://alanba.com.kw/968975 . . . #أميركا #فصل_الصيف #درجة_الحرارة #كورونا #فيروس_كورونا #جريدة_الانباء #الانباء_اخر_الاخبار #الانباء_انستغرام

A post shared by جريدة الأنباء الكويتية (@alanbanews) on

یونیورسٹی کے جاری کردہ ایک بیان میں ، پرنسٹن کے ایک محقق اور مصنف رشل بیکر نے کہا ، “ہمارا مطالعہ ہے کہ گرم اور مرطوب ماحول وبائی مرض کے ابتدائی مرحلے میں وائرس کو کم نہیں کرپائے گا۔”آب و ہوا ، خاص طور پر نمی ، دوسرے کورونا وائرس اور انفلوئنزا وائرس کے پھیلاؤ میں ایک اہم کردار ادا کرتے ہیں تاہم کمزور امیون سسٹم بھی اسکی ایک بڑی وجہ ہے ۔محققین کا خیال ہے کہ ان لوگوں کی تعداد جو اس وائرس سے متاثر نہیں تھے اب بھی بہت زیادہ ہے لیکن اس وائرس سے بچانا غیر یقینی ہوتا جا رہا ہے۔

پوری خبر پڑھنے کیلئے یہاں کلک کریں شکریہ

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button

آپ اس خبر کو کاپی نہیں کرسکتے ہیں

Open

ایڈ بلاک پتہ چلا

برائے مہربانی ایڈ بلاک کو بند کریں شکریہ