دنیا

اقامہ خلاف ورزی کرنے والوں کے لئے امارات سے خوشخبری

گلف نیوز کی رپورٹ کے مطابق جن لوگوں کے ویزا جرمانے معاف کر دیئے گئے ہیں اور وہ 18 مئی کے بعد متحدہ عرب امارات سے چلے گئے ہیں انھیں ملک میں داخل ہونے پر پابندی نہیں ہوگی۔

بدھ کے روز متحدہ عرب امارات کے صدر شیخ خلیفہ بن زید النہیان کی ہدایت کے مطابق تمام ویزا جرمانے پر مکمل معافی کا اعلان کیا گیا ہے۔ داخلہ یا رہائشی اجازت نامے رکھنے والے افراد جن کی معیاد یکم مارچ 2020 سے پہلے ختم ہوچکی ہے اگر وہ 18 مئی کے بعد ملک چھوڑ کر چلے جائیں گے تو انہیں جرمانے ادا کرنے کی ضرورت نہیں ہوگی۔ رعایتی مدت مزید تین ماہ تک جاری رہے گی۔

فیڈرل اتھارٹی برائے شناختی اور شہریت کے ترجمان بریگیڈیئر خامس الکعبی نے کہا کہ نئے حکم سے فائدہ اٹھانے والے لوگوں پر داخلے پر پابندی نہیں ہوگی اور وہ دوبارہ ملک میں داخل ہوسکتے ہیں۔ “اس فیصلے سے فائدہ اٹھانے والوں کو قانون کی دفعات کے مطابق داخلے کے ضوابط پورے کرنے پر ملک میں واپس آنے سے نہیں روکا جائے گا۔حکم نامے میں میعاد ختم ہونے والی امارات کی شناخت اور ورک پرمٹ پر جرمانے کی چھوٹ بھی شامل ہے۔ امیگریشن قانون کے مطابق کسی ایسے فرد کو جو ملک میں جائز رہائش کے ویزا کے بغیر یا داخلے کے اجازت نامے کی مدت ختم ہونے کے بعد غیر قانونی طور پر رہ رہا ہے اسے ملک بدر کردیا جائے گا

بریگیڈ الکعبی نے کہا کہ اتھارٹی جلد ہی میکانزم اور سروس فراہم کرنے والے چینلز کا اعلان کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ “ہم عوام سے درخواست کرتے ہیں کہ وہ اپنی شناخت اور شہریت کے لئے فیڈرل اتھارٹی کا سمارٹ پلیٹ فارم استعمال کریں تاکہ وہ اپنی خدمات حاصل کریں

دریں اثنا جی ڈی آر ایف اے دبئی کے ڈائریکٹر جنرل میجر جنرل محمد احمد المری نے نئے حکم کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ اس سے ویزا کی خلاف ورزی کرنے والوں کو ان کی حیثیت تبدیل کرنے میں مدد ملے گی۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ صورتحال اور ان چیلنجوں کے وسط میں ہمارے قائد کا یہ ایک بہت بڑا اقدام ہے جسے دنیا بھی سراہتی ہے۔ ان احکامات سے ویزا کی خلاف ورزی کرنے والوں کی حیثیت کو تبدیل کرنے اور ملک کی فراہم کردہ خدمات سے فائدہ اٹھانے میں مدد ملے گی

حوالہ: گلف نیوز

پوری خبر پڑھنے کیلئے یہاں کلک کریں شکریہ

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button

آپ اس خبر کو کاپی نہیں کرسکتے ہیں

ایڈ بلاک پتہ چلا

برائے مہربانی ایڈ بلاک کو بند کریں شکریہ