دنیا

سعودی عرب نے اپنی ہوائی، زمینی اور سمندری حدود کھول کر دیں

کویت اردو نیوز 03 جنوری: سعودی عرب نے آج سے سے بین الاقوامی پروازوں کا دوبارہ آغاز کرنے کا اعلان کر دیا۔ سلطنت نے سخت احتیاطی تدابیر پر عمل پیرا ہوتے ہوئے زمینی اور سمندری بندرگاہیں کھول دیں ہیں۔

تحریر جاری ہے‎

تفصیلات کے مطابق ایک سرکاری ذرائع نے بتایا کہ سعودی عرب نئے COVID-19 کے خلاف سخت احتیاطی تدابیر کے درمیان آج اتوار کے روز صبح 11 بجے سے بین الاقوامی پروازوں کا آغاز کرے گا جس سے زمین اور سمندری بندرگاہیں کھلیں گی۔ سعودی عرب نے بین الاقوامی پروازیں معطل کردی تھیں اور 20 دسمبر سے شروع ہونے والے پندرہ دن کے لئے زمینی اور سمندری بندرگاہوں کو بند کردیا تھا۔

مملکت نے یہ شرط عائد کی تھی کہ کوئی بھی غیر ملکی مسافر جو برطانیہ ، جنوبی افریقہ ، اور وزارت صحت کے ذریعہ طے شدہ کسی بھی دوسرے ملک سے سعودی عرب داخل ہونا چاہتا ہے (جس میں COVID-19 کی نئی تبدیل شدہ قسم پھیل چکی ہے) کو کم از کم 14 دن کسی دوسرے ملک میں گزارنا پڑیں گے۔

ان مسافروں کو بھی اس مدت کی میعاد ختم ہونے کے بعد پی سی آر ٹیسٹ کروانا ہوگا تاکہ یہ ثابت کریں کہ ان کے کوویڈ 19 کا نتیجہ منفی ہے۔

کورونا وائرس کی نئی تبدیل شدہ لہر کے وسیع پھیلاؤ والے ممالک سے شہریوں اور مسافروں کو انسانی ہمدردی کی بنیاد پر سعودی عرب میں داخل ہونے کی اجازت دی گئی ہے بشرطیکہ ان کو 14 دن کے لئے گھروں میں قرنطین کی مدت کو پورا کرنا ہو گا اور دو پی سی آر ٹیسٹ کرانے ہوں گے۔ پہلا پی سی آر ٹیسٹ سعودی عرب میں داخل ہونے کے فوراً بعد 48 گھنٹوں کے اندر اندر جبکہ دوسرا قرنطین مدت کے اختتام سے پہلے 13 ویں دن کروانا ہو گا۔

دوسری جانب جن ممالک میں تناؤ کے واقعات درج ہیں ان ممالک کے مسافروں کو 7 دن تک مشاہدے کے تحت ان کے گھروں میں قرنطین کیا جائے گا اور پہنچنے کے چھٹے دن قرنطین کے اختتام سے قبل پی سی آر ٹیسٹ کرایا جائے گا۔

باقی ممالک کے سلسلے میں اس وقت جو احتیاطی تدابیر ہیں ان پر عمل کیا جائے گا جس میں سات دن تک گھر کا قرنطین یا تین دن کے لئے گھریلو قرنطین اور پی سی آر ٹیسٹ شامل ہے۔

حوالہ
گلف نیوز
پوری خبر پڑھنے کیلئے یہاں کلک کریں شکریہ

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button

آپ اس خبر کو کاپی نہیں کرسکتے ہیں

ایڈ بلاک پتہ چلا

برائے مہربانی ایڈ بلاک کو بند کریں شکریہ