دنیا

سعودی عرب تارکین وطن کی بجائے اپنے شہریوں کو نوکریاں دے گا

سعودی وزارت برائے انسانی وسائل اور سماجی ترقی ، ہیومن ریسورسس ڈویلپمنٹ فنڈ اور مارکیٹنگ ایسوسی ایشن نے سعودیہ کو نجی شعبے میں مارکیٹنگ کی نوکریوں کے لئے حوصلہ افزائی کرنے اور ملازمت دینے کے معاہدے پر مہر ثبت کردی ہے کیونکہ ملک تارکین وطن مزدوروں کو شہریوں کے ساتھ تبدیل کرنے کے خواہاں ہے۔

عہدیداروں کے ذریعے دستخط کردہ تعاون اور یادداشت کے تحت سعودیوں کی مہارت اور پیشہ ورانہ معیار کو بہتر بناتے ہوئے اور ان کے مسابقت کو بڑھاوا دے کر سعودی نجی شعبے میں مارکیٹنگ کے پیشے کو مقامی بنانے کی کوشش کریں گے۔

وزارت انسانی وسائل اور سوشل ڈویلپمنٹ مارکیٹنگ کے منظر کا مطالعہ کرے گی۔ اہداف والے پیشوں کے لئے تربیتی کورسز تیار کرنے کے لئے متعلقہ اداروں کے ساتھ ہم آہنگی پیدا کرے گی اور لوکلائزیشن کے متفقہ اہداف کو پورا کرنے کے لئے کام کرے گی۔

اس دوران ہیومن ریسورس ڈویلپمنٹ فنڈ پورے ریاست میں روزگار کی ایگزیبیشن کا باقاعدہ کا انعقاد کرے گا۔ نجی شعبے کو روزگار کے مقاصد کو حاصل کرنے اور اہلیت کے نصاب کی حمایت کرے گا۔

اس کی طرف مارکیٹنگ ایسوسی ایشن تربیت کی ضروریات کا تعین کرے گی، تربیت کا مواد تیار کرے گی اور مارکیٹ کی ضروریات پر مبنی ہدف شدہ ملازمتوں کی وضاحت کرے گی۔

مزید پڑھیں: تارکین وطن کو عزت سے “الوداع” کریں

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ عملدرآمد کے طریقہ کار کے بارے میں فریقوں نے ایک مشترکہ ورکنگ ٹیم تشکیل دینے پر اتفاق کیا ہے جس کے تحت مارکیٹنگ کی ملازمتوں کی وضاحت کی جاسکتی ہے اور اس کا مقصد ایک تفصیلی ٹائم ٹیبل کے مطابق ہے۔ سعودی عرب میں مارکیٹنگ کے میدان میں کام کرنے والے تارکین وطن کی صحیح تعداد کے بارے میں کوئی سرکاری اعداد و شمار موجود نہیں ہیں۔ سعودی عرب کی مجموعی آبادی 34.8 ملین کے لگ بھگ جبکہ 10.5 ملین غیر ملکی ہیں۔

یاد رہے کہ خلیجی ممالک نے حال ہی میں اپنے شہریوں کو کوویڈ 19 کے معاشی اثر کو کم کرنے کی کوشش میں غیر ملکیوں کے ذریعہ کی جانے والی ملازمتوں میں اپنے شہریوں کو ملازمت دینے کی کوششیں تیز کردی ہیں۔

پوری خبر پڑھنے کیلئے یہاں کلک کریں شکریہ

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button

آپ اس خبر کو کاپی نہیں کرسکتے ہیں

ایڈ بلاک پتہ چلا

برائے مہربانی ایڈ بلاک کو بند کریں شکریہ