دنیا

قطر نے تارکین وطن کو جائداد خریدنے کی اجازت دے دی

کویت اردو نیوز 06 اکتوبر: قطر نے غیر ملکیوں کو 09 علاقوں میں جائداد غیر منقولہ رکھنے کی اجازت دے دی۔

تفصیلات کے مطابق قطر نے آج بروز منگل کو کہا ہے کہ وہ غیر ملکی افراد اور کمپنیوں کو معاشی وسائل کو متنوع بنانے کے اقدامات کے تحت اس شعبے کے لئے بیرونی مالی اعانت راغب کرنے کے لئے ضوابط جاری کرتے ہوئے ملک کے دیگر حصوں میں جائداد غیر منقولہ ملکیت کی اجازت دے گا۔

ایک سرکاری بیان میں کہا گیا ہے کہ غیر ملکی افراد 09 علاقوں میں غیر منقولہ جائیداد کے مالک بن سکتے ہیں جبکہ غیرملکی رہائشی املاک کے استحصال کے مستحق علاقوں کی تعداد 16 ہو گئی ہے۔ غیر ملکی کمپنیاں 09 علاقوں میں بھی جائداد غیر منقولہ ملکیت رکھ سکتی ہیں جو پہلے کے مقابلے میں قابل ذکر اضافہ ہے کیونکہ رہائشی املاک کی ملکیت صرف دوحہ میں پرل آئلینڈ پروجیکٹ تک محدود تھی۔

وزارت انصاف کے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ یہ فیصلے قطر میں رئیل اسٹیٹ مارکیٹ کی ترقی میں اہم کردار ادا کرتے ہیں، معاشی ترقی کی رفتار کو تیز کرتے ہیں اور ریل اسٹیٹ سیکٹر کو متحرک کرتے ہیں۔ قطری حکومت ان غیر ملکیوں اور ان کے اہل خانہ کے لئے بھی رہائش فراہم کرے گی جو غیر منقولہ جائداد کے مالک ہیں جن کی مالیت 730،000 ریال (2 لاکھ ڈالر) سے کم نہ ہو۔

یاد رہے کہ 2018 میں قطر نے رئیل اسٹیٹ سیکٹر میں زیادہ سے زیادہ غیر ملکی ملکیت کی اجازت دینے کے لئے ایک قانون پاس کیا تھا جس کو پچھلے کچھ سالوں میں 2022 فیفا ورلڈ کپ کی میزبانی سے قبل تعمیراتی عروج کے ذریعہ سرپلس سپلائی نے سخت متاثر کیا ہے۔

مزید پڑھیں: متحدہ عرب امارات غیر ملکیوں کو شہریت دینے کے لیے تیار

وزیر تجارت و صنعت علی بن احمد الکواری نے ایک الگ بیان میں کہا ہے کہ قطر ان علاقوں کو غیر ملکی ملکیت اور سرمایہ کاری کے لئے نامزد کرکے مقامی اور بین الاقوامی سرمایہ کاروں کے لئے پرکشش مواقع پیدا کرتا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ان تبدیلیوں سے قطر کی معاشی ترقی کو بڑھانے میں بھی مدد ملے گی۔

بین الاقوامی مالیاتی فنڈ کی توقع ہے کہ کورونا وائرس وبائی امراض کے اثرات کی وجہ سے اس سال قطر کی معیشت 4.3 فیصد تک ہوجائے گی۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button

آپ اس خبر کو کاپی نہیں کرسکتے ہیں

Open

ایڈ بلاک پتہ چلا

برائے مہربانی ایڈ بلاک کو بند کریں شکریہ