کویت

کویت ائیرپورٹ ذمہ داری سنبھالنے کے لیے تیار

کویت سٹی 19 مئی: روزنامہ عرب ٹائمز کی رپورٹ کے مطابق واضح ہوتا ہے کہ ملک میں خاص اقدامات کے ساتھ زندگی آہستہ آہستہ معمول کی طرف لوٹ رہی ہے۔ اس تناظر میں حکومتی فیصلے کی صورت میں کویت بین الاقوامی ہوائی اڈے پر کام کرنے والے حکام کی جانب سے ائیر ٹریفک کی واپسی کے لئے ابتدائی اقدامات کرتے ہوئے مسافروں اور ایئر لائنز کی تجارتی پروازوں کو آہستہ آہستہ شروع کرنے کی تیاری میں فراہم کی جانے والی اپنی لاجسٹک خدمات کا جائزہ لیا گیا ہے۔


روزنامہ کے ایک سرکاری ذرائع نے انکشاف کیا کہ مسافروں کے کویت واپس آنے پر کئے جانے والے اقدامات کے لئے ہوائی اڈے پر کام کرنے والی ایجنسیاں صحت کے حکام سے بات چیت کر رہی ہیں جس میں مسافروں کی آمدورفت کے آسان طریقہ کار کا جائزہ لیا جارہا ہے خاص طور پر سول ایوی ایشن کویت ائیرپورٹ پر کام کرنے والی تمام سرکاری اور نجی ایجنسیوں کے ساتھ نگرانی اور ہم آہنگی سے اپنے فرائض سرانجام دے رہی ہے۔
ائیر ٹریفک کو ایک لمبے عرصے سے معطل کرنے کی وجہ سے پہلے مرحلے میں یہ یقینی بنانا شامل ہے کہ ہوائی اڈے کی سہولیات میں استعمال ہونے والے تمام آلات اور سازوسامان مناسب کام کی حالت میں ہیں۔
روزنامہ کے ذرائع نے بتایا کہ ” کابینہ اور صحت حکام کی جانب سے ملنے والی ہدایت پر واپس آنے والی پروازوں کو دوبارہ شروع کرنے کے لئے تیار ہیں۔ آپریشن کو دوبارہ شروع کرنے کی سب سے اہم خصوصیت محکمہ انجینئرنگ کی ہے کہ وہ آنے والے اور روانگیوں کے لئے بیگیج ڈیوائسز ، ایئر برجز ، یارڈز اور رن وے کے لئے نیویگیشنل لائٹنگ ، پارکنگ اور گائیڈنس ڈیوائسز ، ویڈیو اور آڈیو گائیڈنس سسٹم کے ساتھ ساتھ سسٹمز کو یقینی بنانا ہے نیز معائنہ اور سیکیورٹی مانیٹرنگ آلات، مسافر ٹرمینل اور ہوائی اڈے کی سہولیات کے لئے کولنگ اور ایئر کنڈیشنگ، بیک اپ جنریٹرز اور بیٹریوں کے ذریعہ بجلی کے موجودہ استحکام اور تسلسل کی نگرانی کرنا ہے۔

ذرائع کے مطابق آپریشن کا آغاز ابتدائی طور پر آئندہ مسافروں کو اعتماد فراہم کرنے اور ان کی روانگی یا واپسی کے دوران ان کی حفاظت کے لئے مناسب طریقہ کار وضع کرنے پر کام کرنے کے لئے جزوی ہوگا۔ جب تک ویکسین کی فراہمی، سماجی دوری، مسافروں کو اکٹھا کرنے سے گریز، ٹچ فری مفت کاؤنٹرز، بورڈنگ اور سامان کے لئے الیکٹرانک چیک، مسافر اور اس کے سامان کو جراثیم کش بنانے کے لئے خصوصی آلات جیسے ماسک اور دستانے پہننے کے علاوہ ائیرپورٹ پر مہیا کیے جانے جیسے سخت طریقہ کار نہیں مل جاتے ہیں۔
اسی طرح ایسے ممالک ہیں جو صحت کے ضوابط اور قوانین کا اطلاق ان لوگوں کے لئے کریں گے جو مسافروں کی جانچ پڑتال کے ذریعے سفر کرنے کے خواہاں ہیں انہیں ثابت کرنا ہو گا کہ وہ کورونا سے پاک ہیں۔ اسی طرح ممالک کو آپریٹنگ دوروں کے معاملے میں 3 زمروں میں درجہ بند کیا جائے گا۔
1۔ وبائی ممالک 2۔ کم وبائی ممالک 3۔ وبا سے پاک ممالک

حوالہ: عرب ٹائمز

پوری خبر پڑھنے کیلئے یہاں کلک کریں شکریہ

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button

آپ اس خبر کو کاپی نہیں کرسکتے ہیں

ایڈ بلاک پتہ چلا

برائے مہربانی ایڈ بلاک کو بند کریں شکریہ