کویت

23 فروری سے کویت میں جزوی کرفیو کے قوی امکانات

کویت اردو نیوز 19 فروری: کورونا وائرس کے پھیلاؤ کا مقابلہ کرنے کے لئے تمام آپشنز صحت کے حکام کی میز پر موجود ہیں: حکومتی ترجمان طارق المزرم

گورنمنٹ مواصلات سینٹر کے سربراہ اور حکومت کویت کے سرکاری ترجمان طارق المزرم نے کوویڈ 19 وائرس کا مقابلہ کرنے کے لئے اٹھائے گئے اقدامات میں زیادہ سے زیادہ حد تک اضافے کے امکانات کا اشارہ کرتے ہوئے تصدیق کی کہ فی الوقت جزوی یا کل کرفیو کے بارے میں ابھی تک کوئی فیصلہ نہیں لیا گیا ہے۔

طارق المزرم نے اس بات کی طرف بھی اشارہ کیا کہ COVID-19 وائرس کے پھیلاؤ کا مقابلہ کرنے کے لئے تمام آپشنز صحت کے حکام کی میز پر موجود ہیں۔ ایک پریس بیان میں المزرم نے افواہوں سے دور رہنے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ ہر ایک کو صحت کی ضروریات پر عمل پیرا ہونے اور سرکاری ذرائع سے حاصل ہونے والی معلومات پر ہی انحصار کرنا چاہئے۔

متعلقہ مضامین

اس سلسلے میں قابل اعتماد ذرائع نے 23 فروری بروز منگل شام 7 بجے سے صبح 7 بجے تک 21 دن کی مدت کے لئے ملک بھر میں جزوی کرفیو نافذ کرنے کے ارادے کے بارے میں بھی اشارہ کیا۔

انھوں نے کہا کہ “وزارت داخلہ نے مختلف اداروں اور ایجنسیوں سے خطاب کیا جن کی کرفیو کے اوقات میں ضرورت ہوتی ہے اور وہ کرفیو کے اوقات میں موجود رہتے ہیں۔ انہوں مطالبہ کیا کہ وہ اجازت نامے جاری کرنے کے خواہشمند افراد کے نام فراہم کریں تاکہ ان کے لئے اس سلسلے میں ضروری اقدامات اٹھائے جاسکیں۔ اسی کے ساتھ ذرائع نے اشارہ کیا کہ جو اجازت نامے پہلے جاری کیے گئے تھے ان کو دوبارہ استعمال کیا جاسکتا ہے۔

انہوں نے کرفیو کی مدت کے آغاز سے نواصیب باڈر کو بند کرنے اور صرف دونوں بندرگاہوں میں طبی معائنے کے ضروری طریقہ کار اور قرنطین کے عمل کو انجام دینے کے لئے مناسب طبی عملے کی کمی کے پیش نظر صرف سالمی بارڈر کے داخلے کو کھلا چھوڑنے کے امکان کا عندیہ دیا۔

حوالہ
عرب ٹائمز
پوری خبر پڑھنے کیلئے یہاں کلک کریں شکریہ

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button