کویت

کویت واپسی پر 30 ممنوعہ ممالک کے ادارہ جاتی قرنطین کی مدت کم ہونے کی توقع

کویت اردو نیوز 19 فروری: تفصیلات کے مطابق سول ایوی ایشن کی جنرل انتظامیہ نے اعلان کیا ہے کہ کویت آنے والے تمام مسافروں کو اگلے اتوار 21 فروری سے “کویت مسافر” یا “سیفٹی پلیٹ فارم” پر اندراج کرکے اپنے اخراجات پر 14 دن کی مدت کے لئے مقامی ہوٹل میں ادارہ جاتی قرنطین کرنے کا پابند کیا جائے گا۔

انتظامیہ نے واضح کیا کہ 2020 کے انتظامی سرکلر نمبر 98 برائے 17 ستمبر 2020 اور 2020 کے ہی سرکلر نمبر 106 برائے 20 دسمبر 2020 کو جاری کردہ کی بنیاد پر کالعدم ممالک کے لئے گئے فیصلے کے مطابق پہلے 4 مخصوص ممالک میں ارجنٹائن ، فرانس، یمن اور برطانیہ کی نشاندہی کی گئی ہے۔ ان ممالک سے آنے والے مسافروں کے لیے یہ لازمی ہے کہ وہ 14 روزہ ادارہ جاتی قرنطین مکمل کریں۔ اس کے علاوہ باقی ممالک سے آنے والے تمام مسافروں کو “کویت مسافر” پلیٹ فارم پر اندراج کر کے اپنے اخراجات پر 7 دن کی مدت کے لئے منظور شدہ مقامی ہوٹلوں میں سے کسی ایک میں قرنطین کی مدت پوری کرنی ہوگی بشرطیکہ “پی سی آر” ٹیسٹ چھٹے دن کیا جائے اور اگر یہ ثابت ہوجائے کہ مسافر کورونا وائرس سے پاک ہے تو وہ مزید 7 دن اپنے گھر میں قرنطین کی مدت پوری کرے گا۔

انتظامیہ نے تصدیق کی کہ کویت آنے والی پروازوں میں کسی بھی مسافر کو ہرگز قبول نہیں کیا جائے گا اگر مسافر نے “کویت مسافر” پلیٹ فارم http://kuwaitmosafer.gov.kw پر اندراج نہیں کیا ہوگا۔ آنے والے مسافر 2 پی سی آر امتحانات کے اخراجات خود برداشت کریں گے اور PCR کی لاگت “کویت مسافر” پلیٹ فارم یا ایئر لائنز اور گراؤنڈ سروس فراہم کنندگان کے ذریعے جمع کی جائے گی۔

متعلقہ مضامین

سرکلر میں اس بات کو یقینی بنایا گیا ہے کہ “سیفٹی” پلیٹ فارم کے ذریعے گھریلو ملازمین کا کویت میں استقبال ہوتا رہے گا۔

سول ایوی ایشن کی جنرل ایڈمنسٹریشن نے دیگر ایسے ممالک کے نام یا ان کی تعداد کے بارے میں واضح بیان نہیں دیا جن کے لئے ادارہ جاتی قرنطین کا اطلاق 7 دن کی مدت کے لئے ہوٹل اور مزید 7 دن گھر میں کیا جائے گا۔ ذرائع نے توقع کی کہ اس میں باقی ممنوعہ 30 ممالک بھی شامل ہوں گے بشرطیکہ ان کے شہریوں نے غیر ممنوعہ ممالک جیسے دبئی ، ترکی اور دیگر ممالک سے کسی تیسرے ملک میں 14 دن گزارے ہوں گے۔

30 ممالک کی فہرست میں مندرجہ ذیل ممالک شامل ہیں:

ہندوستان ، ایران ، چین ، برازیل ، کولمبیا ، آرمینیا ، بنگلہ دیش ، فلپائن ، شام ، اسپین ، بوسنیا اور ہرزیگوینا ، سری لنکا ، نیپال ، عراق ، میکسیکو ، انڈونیشیا ، چلی ، پاکستان ، مصر ، لبنان ، ہانگ کانگ ، اٹلی ، شمالی مقدونیہ ، مالڈووا ، پاناما ، پیرو ، سربیا ، مونٹی نیگرو ، جمہوریہ ڈومینیکن اور کوسوو۔

حوالہ
الأنباء
پوری خبر پڑھنے کیلئے یہاں کلک کریں شکریہ

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button