کویت

کویت آنے کے لئے ناقابل واپسی رقم کے ساتھ ہوٹل بکنگ لازم قرار

کویت اردو نیوز 12 فروری: ڈائریکٹر جنرل سول ایوی ایشن (ڈی جی سی اے) کے ترجمان سعد العطیبی نے کہا کہ 21 فروری سے اپنے خرچ پر کویت پہنچنے والے مسافروں کے مقامی ہوٹلوں میں سات دن تک ادارہ جاتی قرنطین سے متعلق کابینہ کے فیصلے پر عمل درآمد کے لئے متعلقہ فریقوں سے مستقل ملاقاتیں کی جا رہی ہیں۔


روزانہ القبس نے اس بات کو رپورٹ کرتے ہوئے کہا کہ آنے والے مسافر کو “کویت ٹریولر پلیٹ فارم” پر اندراج کرنا ہو گا اور گھر میں طے شدہ 7 یا اس سے زیادہ دن کی مدت پوری کرنا پڑے گی۔ روزنامہ القبس کو ایک بیان میں العطیبی نے اعلان کیا ہے کہ ادارہ جاتی قرنطین کے حوالے سے اٹھائے جانے والے سب سے اہم تاثر یہ ہے کہ کوئی بھی شہری یا رہائشی کسی ہوٹل میں ادارہ جاتی قرنطین سائٹ کا انتخاب کرنے اور انتخاب کے اخراجات پورے کئے بغیر اپنے ملک سے کویت کے لئے سفر نہیں کرسکتا جبکہ بکنگ کی یہ رقم قابل واپسی بھی نہیں ہو گی۔ مسافر سفر سے پہلے اس کی ادائیگی کرے گا تاکہ اس میں 7 مسلسل دنوں کے لئے طے شدہ ادارہ جاتی قرنطین مدت بھی شامل ہو۔”

پہلی بار ملک آنے والے لوگوں سے نمٹنے کے طریقے کے بارے میں العطیبی نے کہا کہ “پہلی بار آنے والے افراد کو پہنچنے سے پہلے کویت ٹریولر پلیٹ فارم کے ذریعہ ایک ہوٹل کی بکنگ کرنی ہوگی۔” انہوں نے نشاندہی کی کہ ایئر لائنز کو یہ یقینی بنانے کی ذمہ داری سونپی جائے گی کہ وہ پی سی آر ٹیسٹ لینے یا ہوٹلوں میں ادارہ جاتی قرنطین اپنانے کے سلسلے میں ملک آنے والے افراد کے لئے سفری ضروریات پوری کریں۔

متعلقہ مضامین

انہوں نے مزید کہا کہ یہ کام وزارت اطلاعات اور کویت ہوٹلوں کمپنی کے سیاحت کے شعبے کے ساتھ تعاون اور ہم آہنگی میں کیا گیا ہے جو ہوٹل صحت کی مخصوص ضروریات کے مطابق ادارہ جاتی قرنطین کا حصہ ہیں۔ ہوٹلوں میں انتہائی اہم ضروریات کے بارے میں العطیبی نے کہا کہ صحت سے متعلق ضروریات کا اطلاق ہوٹلوں کی ذمہ داری ہوگی کیونکہ آنے والے مسافروں کے لئے ہر ہوٹل میں خصوصی منزلیں مختص کی جائیں گی اور کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے ان مسافروں کو بند ڈبوں میں کھانا فراہم کیا جائے گا۔ ہوٹل کی قیمتوں اور ان کے اخراجات کے بارے میں العطیبی نے کہا کہ کسی خاص قیمت پر اتفاق نہیں ہوا ہے بلکہ مسافر ہوٹل اور اس کی قیمت کا انتخاب کرسکتا ہے جو ادارہ جاتی قرنطین میں اس کی مالی صلاحیتوں کے مساوی ہے کیونکہ ملک آنے والے تمام افراد کے لئے 3 ، 4 اور 5 ستارہ ہوٹل دستیاب ہوں گے۔

العطیبی نے ہوٹلوں میں ادارہ جاتی قرنطین کے لئے 10 کنٹرول درج کیے:

  1. تمام شہریوں اور رہائشیوں کے لئے ادارہ جاتی قرنطین لازم ہو گا۔
  2. ایئر لائنز کو ہوٹلوں میں مسافروں کی بکنگ کی تصدیق کرنی ہوگی۔
  3. مسافر کو اپنی حیثیت کے مطابق ہوٹل کا انتخاب کرنے کی آزادی حاصل ہو گی۔
  4. ملک کے تمام ہوٹلوں کو ادارہ جاتی قرنطین سے فائدہ اٹھانے کا موقع فراہم کیا جائے گا۔
  5. ہر ہوٹل میں ایک ہفتے کے لئے قرنطین کے لئے منزلیں مختص کی جائیں گی۔
  6. ادارہ جاتی قرنطین مدت ختم ہونے کے بعد متعلقہ فرد گھر میں فرنطین کی مدت پوری کرے گا۔
  7. ہوٹل اس بات کو یقینی بنائے گا کہ وائرس سے انفیکشن کی روک تھام کے لئے بند ڈبوں میں کھانا فراہم کیا جا رہا ہے۔
  8. ہوٹل کے معاوضے ناقابل واپسی ہیں اور مسافر سفر سے قبل انہیں ادائیگی کرے گا۔
  9. سول ایوی ایشن، سیاحت کے شعبے اور کویت ہوٹلوں کی کمپنی کی نمائندگی کرنے والے “میڈیا” کے ساتھ ہم آہنگی کرے گی۔
  10. قرنطین کئے جانے والے مسافروں کی صحت کی ضروریات کا اطلاق ہوٹلوں کی ذمہ داری ہوگی۔

حوالہ
عرب ٹائمز
پوری خبر پڑھنے کیلئے یہاں کلک کریں شکریہ

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button