کویت

کویت کی تیارکردہ ایپلیکیشن “شلونک” پہلے نمبر پر آ گئی

کویت اردو نیوز 16 دسمبر: “شلونک” کا “انفارمیٹکس” ایوارڈ جیتنا “محکمہ صحت” اور ایپلی کیشن ذمہ داروں کے لئے باعث فخر ہے: عبداللہ السند

تحریر جاری ہے‎

تفصیلات کے مطابق وزارت صحت کے ترجمان ڈاکٹر عبد اللہ السند نے تصدیق کی کہ “شلونک” ایپلی کیشن کو اس کے بیسویں سیشن میں انفارمیٹکس کے لئے عزت مآب شیخ سالم العلی الصباح کے ایوارڈ میں پہلی پوزیشن سے نوازا گیا ہے۔ یہ بات وزارت اور اس ایپلی کیشن کے ذمہ داران کے لئے قابل فخر ہے خاص طور پر اس وقت جب کویت کے اندر اور کویت سے باہر ایوارڈ کے

اہل ہونے والے جدید ترین منصوبوں کے مابین زبردست مقابلہ دیکھنے میں آیا۔ ڈاکٹر عبداللہ السند نے شلونک ایپلیکیشن کی اہمیت واضح کرتے ہوئے اپنے ایک بیان میں مزید کہا کہ شلونک ایپلیکیشن کو امیر الکویت شیخ سالم العلی الصباح کی جانب سے انفارمیٹکس کے لئے پہلی پوزیشن اور ایوارڈ ریاست کے اندر اور انٹرنیشنل جدید اور اہل منصوبوں کے مابین مسابقت میں دیا گیا ہے جو ایپلیکیشن کے فوائد اور وزارت کی قابلیت کی عکاسی کرتا ہے۔ وزارت صحت کی جانب سے جدید ترین ٹیکنالوجی پر مبنی ایپلی کیشن تیار کی گئی تھی جس میں حفاظتی تدابیر کا اطلاق اور مطلوبہ معیار کے تقاضوں کو مدنظر رکھا گیا تھا۔

مسابقت میں منصوبوں سے حاصل ہونے والے فوائد ایوارڈ اور جیوری میں حصہ لینے والے منصوبوں کے لئے اہلیت کمیٹی کے مطالعہ اور جائزہ کا کلیدی موضوع تھا۔ کمیٹی میں ریاست کویت میں اعلی تکنیکی اور سائنسی مہارت رکھنے والے 10 ماہرین شامل تھے جبکہ اس میں جیوری اور بورڈ عرب ثالثی شامل ہیں۔ عرب ممالک کے سرکاری اور سول ایجنسیوں کے 9 سینئر اہلکار جیوری کا حصہ تھے۔ ڈاکٹر السند نے قرنطین کئے گئے افراد کی پیروی میں شلونک ایپلی کیشن کے موثر کردار کا حوالہ دیا اور کورونا وائرس (کوویڈ19) کا مقابلہ کرنے کے لئے احتیاطی تدابیر میں ان کی وابستگی کی حد کی تصدیق کے لئے نہایت موثر کردار ادا کیا۔ ایپلی کیشن نے “بہترین تکنیکی منصوبوں” کے عنوان سے لانچ کئے گئے ایوارڈز میں اپنے فوائد اور اہمیت کی بنیاد پر ایوارڈ حاصل کیا ہے۔

ڈاکٹر السند نے شیخ سالم العلی الصباح انفارمیٹکس ایوارڈ کے انچارجز کی کوششوں اور اس کے مقاصد کی قدر کی جن کا مقصد انفارمیشن ٹکنالوجی کے میدان میں مسابقت، جدت طرازی، انسانی صلاحیتوں کی نشوونما اور معلومات کی مہارت کو اپ گریڈ کرنا ہے۔

حوالہ
الرای
پوری خبر پڑھنے کیلئے یہاں کلک کریں شکریہ

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button

آپ اس خبر کو کاپی نہیں کرسکتے ہیں

ایڈ بلاک پتہ چلا

برائے مہربانی ایڈ بلاک کو بند کریں شکریہ