کویت

کویت: کورونا ویکسین تارکین وطن کو بھی مفت فراہم کی جائے گی

کویت اردو نیوز 26 نومبر: رہائشیوں کو کورونا ویکسین مفت مہیا کی جائے گی۔

وزارت صحت کورونا کے لئے فائزر ویکسین اور دیگر ویکسین وصول کرنے کے طریقوں کا تعین کرنے پر کام کر رہی ہے اور امید ظاہر کی جا رہی ہے کہ کورونا ویکسین اس سال کے آخر میں یا 2021 کی پہلی سہ ماہی میں پہنچیں گی۔

وزارت کے باخبر ذرائع نے روزنامہ القبس کو انکشاف کیا کہ وہ اس مقدار کی بنیاد پر فائزر ویکسین کی آمد کے پہلے مرحلے میں زیادہ سے زیادہ ویکسین حاصل کرنے کے دائرہ کار کو بڑھانے کے لئے کام کر رہے ہیں۔ ذرائع نے انکشاف کیا کہ حکومت کویت نے رہائشیوں پر کورونا ویکسین لینے کے لئے فیسیں لگانے کو مسترد کردیا ہے اگر وہ ابتدائی معاہدوں کے مطابق ویکسین تیار کرنے والی کمپنیوں کے ساتھ دستیاب ہوں۔

ذرائع نے بتایا کہ دنیا کے مختلف ممالک میں تقسیم کی جانے والی کورونا ویکسین فیزر، موڈرنا اور آسٹرا زینیکا بین الاقوامی صحت کے حکام اور تنظیموں سے منظوری حاصل کرنے کے قریب ہیں۔ “اصولی” معاہدوں میں فیزر ویکسین کی تقریبا ایک ملین خوراکیں ، موڈرنا کی 17 لاکھ خوراکیں اور “آکسفورڈ آسٹرا زینیکا” کی 3 ملین خوراکیں ہر شخص کے لیے دو خوراکوں کی شرح کے حساب سے درآمد کی جائیں گی۔ انہوں نے بتایا کہ چونکہ زیادہ تر ویکسین 18 سال سے کم عمر بچوں کو دینے کی سفارش نہیں کی جاتی ہے لہٰذا اگر عالمی سطح پر ویکسین کی منظوری دی جاتی ہے تو تقریبا 5.7 ملین خوراک کی درآمد 2.8 ملین لوگوں کے لیے کافی ہے۔ موجودہ مدت کے دوران عام ذرائع نے یہ نتیجہ اخذ کیا کہ ترجیح یہ ہے کہ رہائشیوں سے پہلے مخصوص گروہوں اور کویتی شہریوں کے لئے کورونا ویکسین وصول کی جائے جن میں بزرگ اور زیادہ خطرے والے دائمی بیماریوں میں مبتلا افراد، صحت کی سہولیات میں طبی عملہ، نرسنگ عملہ اور کارکنان دوسرے درجے کے گروپوں سے فارغ التحصیل ہونے سے پہلے پہلی جماعت کو ابتدائی مراحل میں شامل ہیں۔

وزارت صحت کے باخبر ذرائع نے القبس کی تصدیق کرتے ہوئے مندرجہ ذیل مکمل تفصیلات بتائیں کہ وزارت کورونا کے لئے فائزر ویکسین حاصل کرنے کے طریقوں اور اس سال کے آخر میں اس کے بعد دیگر ویکسینوں کی نشاندہی کرنے پر کام کر رہی ہے۔ 2021 کی پہلی سہ ماہی اس بات کی نشاندہی کرتی ہے کہ وہ فائزر ویکسین کی آمد سے پہلے مرحلے میں ایک سے زیادہ طبقات کے حصول کے دائرہ کار کو بڑھانے کے لئے کام کر رہا ہے۔

وزارت صحت نے ایک بار پھر زور دیتے ہوئے کہا کہ عوام مندرجہ ذیل 6 احتیاطی اقدامات پر عمل پیرا ہوں۔

  • اس عرصے کے دوران سفر کرنے سے گریز کریں خاص طور پر اگر آپ کو سانس کی علامات کا سامنا ہو۔
  • کھانسی اور چھینکنے کے آداب سے متعلق حفاظتی ہدایات پر عمل کریں۔
  • کسی بھی ممکنہ آلودہ سطحوں کو چھونے کے بعد ناک ، منہ اور آنکھوں کو نہ چھونا۔
  • سلام کرتے وقت بوسہ لینے اور مصافحہ کرنے سے گریز کریں۔
  • دفاتر اور گھروں میں سماجی پروگراموں کا انعقاد نہ کریں۔
  • کسی بھی ملک میں سرکاری حکام کے ذریعہ جاری کردہ صحت کی ہدایات پر عمل کریں جس کے لئے شہری اور رہائشی روانہ ہوں۔

حوالہ
القبس
پوری خبر پڑھنے کیلئے یہاں کلک کریں شکریہ

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button

آپ اس خبر کو کاپی نہیں کرسکتے ہیں

ایڈ بلاک پتہ چلا

برائے مہربانی ایڈ بلاک کو بند کریں شکریہ