کویت

کویت: 60 سالہ تارکین وطن کی فیملی ویزہ میں منتقلی ممکن ہے

کویت اردو نیوز 19 نومبر: ہائی اسکول یا اس سے کم تعلیم رکھنے والے 60 سالہ تارکین وطن کا اقامہ فیملی ویزا میں منتقل ہوسکتا ہے۔

جیسا کہ ہائی اسکول کا سرٹیفکیٹ یا اس سے کم تعلیم رکھنے والے 60 سالہ تارکین وطن کے لئے اگلے سال کے آغاز پر ہی ورک پرمٹ کے اجرا پر پابندی عائد کرنے کا فیصلہ آرہا ہے جس کی وجہ سے اس زمرے میں آنے والے ہزاروں تارکین وطن کے سامنے بس یہی ایک آپشن رہ جاتا ہے کہ وہ اپنے ورک ویزا کو فیملی ویزا میں منتقل کریں۔

پبلک اتھارٹی برائے افرادی قوت (پی اے ایم) کے ڈائریکٹر جنرل احمد الموسیٰ نے کہا کہ “اتھارٹی فیصلے پر عمل درآمد کے ساتھ آگے بڑھ رہی ہے۔ اس نے مخصوص گروپ کے انتظامی انتظامات کرنے کے لئے ایک مدت مقرر کی ہے جس میں ان کی قانونی حیثیت میں ترمیم کرنے کے فیصلے کا احاطہ کیا گیا ہے لہٰذا 2021 میں رہائشی اقامے کے خاتمے کے بعد ان پر اس فیصلے کا اطلاق نہیں ہوگا۔

اس کا اطلاق ورک پرمٹ ویزہ رکھنے والے ان افراد پر ہوتا ہے جن پر 1 جنوری 2021 سے ان کی میعاد ختم ہونے کی تاریخ تک اس فیصلے کے نفاذ کے بعد نافذ ہو گا جس کے بعد ان کی تجدید نہیں ہوگی تاہم یہ فیصلہ ریزیڈنسی سے متعلق دیگر اقامے جیسے شراکت داری (پارٹنر) یا فیملی اقامے کو اپنی قانونی حیثیت میں ترمیم کرنے سے نہیں روکتا ہے نیز اس فیصلے میں اس کی دفعات کے اطلاق سے مستثنیات شامل نہیں ہیں۔

انہوں نے اشارہ کیا کہ یہ فیصلہ دستیاب اعدادوشمار کے مطابق پبلک اتھارٹی برائے افرادی قوت کے مکمل مطالعے کے بعد جاری کیا گیا ہے کیونکہ اس نے ان افراد کے مخصوص طبقے کو نشانہ بنایا ہے جو ہائی اسکول کے سرٹیفکیٹ، اس سے کم تعلیم یا وہ جو بالکل بھی تعلیم نہ رکھتے ہوں۔

الموسیٰ نے زور دے کر کہا کہ اس فیصلے میں ان تارکین وطن کو شامل نہیں کیا گیا ہے جو سیکنڈری ڈپلومہ یا اعلی قابلیت (ڈگری) کے حامل کچھ بھی رکھتے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ یہ فیصلہ ان اختیارات کی روشنی میں پیشہ ور افراد کی درجہ بندی کی طرف پی اے ایم کے جھکاؤ کے موافق ہے۔ اس فیصلے کا مقصد مخصوص گروپ کی سرگرمیوں اور پیشوں کو ہدف بنانا ہے جو مختلف مہارتوں اور پیشوں کو اپنانے کے ساتھ مطابقت نہیں رکھتے ہیں۔

60 سال یا اس سے زیادہ عمر والوں کے بارے میں فیصلہ:

الموسیٰ نے کہا کہ “یہ فیصلہ 60 سال سے زیادہ عمر کے افراد کو طبقاتی قانونی حیثیت میں ترمیم کرنے سے نہیں روکتا، رہائشی اقامے جیسے شراکت داری (پارٹنر) یا فیملی ویزا وغیرہ۔

انہوں نے فیصلے پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ “پی اے ایم نے اپنے انتظامی فیصلہ نمبر 520/2020 کو جاری کیا ، انتظامی اجازت نامہ نمبر 552/2018 میں ترمیم کرتے ہوئے کام کے اجازت ناموں کے لئے اصولوں اور طریقہ کار کی فہرست جاری کی جس میں عام ثانوی اسکول کا سرٹیفکیٹ اور اس کے نیچے اور مساوی سرٹیفکیٹ رکھنے والے 60 سال یا اس سے اوپر کی عمر تک پہنچنے والوں کے لئے ورک پرمٹ کے اجراء پر پابندی ہے جبکہ یہ فیصلہ یکم جنوری 2021 سے لاگو ہوگا۔

“فیملی اقامہ” سے “پرائیویٹ اقامہ” پر منتقلی:

فیملی ویزا سے نجی شعبے کے کام کے ویزا میں منتقلی کے بارے میں الموسیٰ نے کہا کہ “کمیشن نے اپنے انتظامی فیصلہ نمبر 529/2020 کو جاری کرتے ہوئے کارکنوں کی منتقلی کی شرائط سے متعلق انتظامی قرارداد نمبر 842/2015 میں ترمیم کی جس میں اس کے آرٹیکل نمبر 2 کے تحت فیملی ویزہ کو نجی شعبے کے ورک ویزا میں منتقل کرنے کی ممانعت ہے جبکہ اس فیصلے میں ایک خاص نوعیت کے کچھ گروہوں کو خارج کردیا گیا ہے جو درج ذیل ہیں:

  • کویتی خواتین کے غیر کویتی شریک حیات اور بچے
  • کویتی مردوں کی غیر کویتی بیویاں
  • کویت میں پیدا ہونے والے
  • دستاویزات رکھنے والے فلسطینی
  • وہ لوگ جو ریاست کویت کے تعلیمی اداروں سے سیکنڈری اسکول سے زیادہ یا اس سے زیادہ سند رکھتے ہیں۔

“حکومتی اقامہ” سے “پرائیویٹ اقامہ” پر منتقلی:

سرکاری شعبے سے کارکنوں کو نجی شعبے میں منتقلی کے بارے میں الموسیٰ نے وضاحت کی کہ “اتھارٹی کے جاری کردہ انتظامی فیصلے نمبر 529/2020 کی روشنی میں اس کے آرٹیکل 1 میں سرکاری سیکٹر سے کارکنوں کی منتقلی پر پابندی عائد کی گئی ہے ماہ سوائے کچھ مخصوص گروپوں کے جو درج ذیل ہیں:

  • کویتی خواتین کے غیر کویتی شوہر اور بچے
  • کویتی مردوں کی غیر کویتی بیویاں
  • وہ افراد جو ریاست کویت میں پیدا ہوئے
  • دستاویزات کے حامل فلسطینی
  • صحت کے شعبے میں مہارت رکھنے والے تکنیکی پیشوں والے افراد جو وزارت صحت سے طبی سرگرمیوں پر عمل کرنے کے لائسنس رکھتے ہوں۔

حوالہ
عرب ٹائمز
پوری خبر پڑھنے کیلئے یہاں کلک کریں شکریہ

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button

آپ اس خبر کو کاپی نہیں کرسکتے ہیں

ایڈ بلاک پتہ چلا

برائے مہربانی ایڈ بلاک کو بند کریں شکریہ