کویت

کویت: وزارت داخلہ نے اقامہ منتقل کرنے کے بارے میں وضاحت کر دی

کویت اردو نیوز 04 نومبر: وزارت داخلہ نے اقامہ منتقل کرنے کی اجازت والے زمروں کے بارے میں واضح کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق رہائشی اقامے کی منتقلی کے معاملے میں تنازعہ پھیل جانے کے باعث وزارت داخلہ نے ان اقسام کے بارے میں وضاحت کرنے کا فیصلہ کیا جن کو سرکاری ایجنسیوں سے دیگر ایجنسیوں میں اپنا رہائشی اقامہ منتقل کرنے کی اجازت ہو گی۔

روزنامہ القبس کی خبر کے مطابق آرٹیکل 22 کے ویزا کو انحصار ویزا (Dependent Visa) میں منتقل کرنے کے امکان کی تصدیق کردی گئی ہے۔ رہائشی اقامہ کی منتقلی کی اجازت دی گئی اقسام کے بارے میں وزارت تعلیم کی انکوائری کے جواب میں وزارت داخلہ نے کہا کہ “آرٹیکل 22 کے تحت فیملی ویزا میں رہائشی اقامہ کی منتقلی کے لئے درخواست دینے کے لئے درخواست دہندگان کو رہائشی امور کی عمومی انتظامیہ میں جانا ہو گا جہاں ہر درخواست کا الگ سے مطالعہ کیا جائے گا۔ اس کا اطلاق آرٹیکل 24 ویزا (خود کفالت) میں منتقل کرنے کی درخواستوں پر بھی ہوتا ہے۔

وزارت داخلہ نے وضاحت کی کہ تارکین وطن کے رہائشی قانون کے ایگزیکٹو ضوابط میں وزارتی قرارداد نمبر 957/2019 کے آرٹیکل 13 میں کویت میں پیدا ہونے والے تارکین وطن کے لئے عارضی یا باقاعدہ رہائشی اجازت نامے کی اجازت دی گئی ہے۔

رہائشی امور کی جنرل ایڈمنسٹریشن کے طے شدہ قواعد کے مطابق رہائشی اجازت نامہ ایک قسم سے دوسری نوعیت میں منتقل کیا جاسکتا ہے۔ قیام کی مدت اس کے مقصد سے متعلق ہے اور اس مقصد کے خاتمے کے ساتھ ختم ہوجاتی ہے چاہے وہ اس کی مدت پوری ہونے سے پہلے ہی ہو۔

آرٹیکل 17 کے تحت ویزا کے لئے سرکاری ایجنسیوں کے مابین اس کے تبادلے کے لئے سول سروس کمیشن کی منظوری کے علاوہ ملازمت کرنے والے ادارے اور اس پارٹی کو جو اس کی تقرری کرنا چاہتا ہے اس کی منظوری کی ضرورت ہے۔

مزید پڑھیں: تقریبا 200000 بطاقے ابھی تک مالکان نے وصول نہیں کیے

جہاں تک آرٹیکل 18 کے تحت سرکاری سیکٹر سے نجی شعبے میں ویزا کی منتقلی کی بات ہے اس کے لئے افرادی قوت کے لئے پبلک اتھارٹی سے ورک پرمٹ کی ضرورت ہے نیز وہ پیشہ جس میں درخواست دہندہ کو ملازمت کرنا ہے درخواست دہندہ کے ذریعہ حاصل کردہ مہارت اور قابلیت کے ساتھ اس پیشے کے ساتھ موافق ہونا چاہئے جس میں وہ سرکاری شعبے میں کام کررہا تھا۔

سرکاری اقامہ کو فیملی ویزا پر منتقل کرنے کی شرائط یہ ہیں:

  • پبلک اتھارٹی برائے افرادی قوت کا ورک پرمٹ۔
  • درخواست دہندہ جس پیشے میں ملازمت کرنا چاہتا ہے وہ اس پیشے کے ساتھ مماثلت رکھتا ہو جس میں وہ سرکاری شعبے میں کام کررہا ہے۔
  • پیشہ تخصیص اور درخواست دہندہ کے ذریعہ حاصل کردہ قابلیت پر مبنی ہونا چاہئے۔

منتقلی کی منظوری کی ضرورت ہے:

  • جس اختیار میں وہ کام کر رہا تھا اس کی منظوری۔
  • اس کو تقرر کرنے کے خواہشمند ادارے کی منظوری
  • سول سروس کمیشن کی منظوری۔

حوالہ
عرب ٹائمز
پوری خبر پڑھنے کیلئے یہاں کلک کریں شکریہ

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button

آپ اس خبر کو کاپی نہیں کرسکتے ہیں

ایڈ بلاک پتہ چلا

برائے مہربانی ایڈ بلاک کو بند کریں شکریہ