کویت

کویت: معیشت کو مستحکم ہونے میں مزید ایک سال درکار

کویت اردو نیوز 26 ستمبر: کویت کی معیشت 2022 تک مستحکم ہونے کا امکان ہے۔

بین الاقوامی کریڈٹ ریٹنگ ایجنسی اسٹینڈرڈ اینڈ پورز (ایس اینڈ پی) نے کہا ہے کہ کویت کی معیشت سے متعلق درجہ بندی کے خطرات یہ ہیں کہ کویت پوری طرح سے تیل کی آمدنی پر منحصر ہے جو اس کی برآمدات کا 90 فیصد ہے۔

کورونا بحران کی وجہ سے آئل انڈسٹری کے امکانات نمایاں طور پر کمزور ہوئے ہیں جس کے نتیجے میں ٹریول انڈسٹری میں تیزی سے کمی آئی ہے۔ کویت کی معاشی کارکردگی میں تیل کی صنعت نے اہم کردار ادا کیا ہے۔ تیل کی صنعت پر وبا کے اثرات کے براہ راست منفی اثرات کویت کی وسیع معیشت پر پڑے ہیں جبکہ رواں سال کے دوران دنیا کے بیشتر ممالک میں اسی طرح کی صورتحال پائی گئی ہے۔

بنیادی معاشی توقعات اس سال کویت کی جی ڈی پی میں 7 فیصد کی کمی پر توجہ مرکوز کرتی ہیں اور اگلے سال اس کی بحالی متوقع نہیں ہے کیونکہ اندازہ ہے کہ اس میں معاشی نمو کی شرح صفر ہوجائے گی اور اس کی بڑی وجہ پیداوار میں کمی ہے۔ ایس اینڈ پی کے مطابق کویت کی معیشت کی بحالی 2022 سے متوقع ہے اس کے علاوہ 2022 اور 2023 کے دوران GDP اوسطا 7 فیصد تک پہنچ جائے گی۔

مزید پڑھیں: کویت میں اب تک کی صورتحال اور ہونے والی پیش رفت کی تفصیلات

ایجنسی نے نشاندہی کی کہ جی ڈی پی کا فی کس شیئر گذشتہ سال کے دوران 28.6 ہزار ڈالر سے کم ہوکر 2020 میں 22،000 ڈالر رہ گیا جو 2021 کے دوران ایک بار پھر بڑھ کر 25.7 ہزار ڈالر پہنچ جائے گا۔ افراط زر کے انڈیکس کے حوالے سے ایجنسی نے توقع کی کہ اس کی کمی موجودہ سال کے دوران 1 فیصد اور پھر 2021 میں 1.5 فیصد تک بڑھ جائے گی۔

دوسری طرف ایجنسی کا کہنا ہے کہ کویتی انشورنس کے شعبے میں ترقی کے امکانات مثبت ہیں کیونکہ کویت انشورنس مارکیٹ خطے میں تیزی سے بڑھتی ہوئی انشورنس منڈیوں میں شامل ہے لیکن “کوویڈ” پر قابو پانے کے اقدامات بشمول سفری پابندیاں اور کرفیو نافذ کرنے سے امکانی طور پر اس سال پریمیم کی نمو اور منافع سست ہوجائے گا۔

ایجنسی نے درمیانے درجے پر کویت کے انشورنس سیکٹر کا اندازہ کیا اور اس بات کا اشارہ کیا کہ ملک میں عام اور صحت انشورنس کا شعبہ عام طور پر منافع بخش رہے گا کیونکہ زیادہ تر مقامی انشورنس کمپنیاں بڑے پیمانے پر گاڑیوں اور میڈیکل انشورنس کے ساتھ کام کررہی ہیں۔

حوالہ
عرب ٹائمز
پوری خبر پڑھنے کیلئے یہاں کلک کریں شکریہ

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button

آپ اس خبر کو کاپی نہیں کرسکتے ہیں

ایڈ بلاک پتہ چلا

برائے مہربانی ایڈ بلاک کو بند کریں شکریہ