کویت

کویت: ٹیکسی حضرات کو نئی مشکل کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے

کویت سٹی 30 جولائی: ٹیکسیاں واپس روڈ پر تو آ گئیں لیکن ڈرائیور حضرات مشکلات کا سامنا کرسکتے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق ٹیکسیاں جو کورونا وائرس کے پھیلاؤ کے بعد پانچ مہینوں سے دھول کھا رہی تھیں کویت کی سڑکوں پر واپس نکل آئیں جو اس کاروبار میں واپس آنے کی ایک مایوس کن کوشش کی طرح دکھائی دے رہی ہیں جبکہ زیادہ تر مسافر ٹیکسیوں کے بغیر سفر کرنے کے عادی ہوچکے ہیں۔ یہ رپورٹ روزنامہ السیا سیہ میں شائع کی گئی۔

ٹیکسی ڈرائیور جو معاش کے ایک اہم ذرائع سے محروم ہو گئے ہیں اس بار نئے حالات اور نئے قواعد کے تحت کاروبار میں واپس آئے ہیں ان میں سب سے نمایاں ہر گاڑی میں صرف ایک مسافر ہے جو کچھ مشکلات کا سبب بن سکتا ہے خاص طور پر اگر مسافر شوہر اور بیوی ہو یا لڑکی اور اس کے بھائی یا بہن ہیں۔

تکلیف:

ٹیکسی ڈرائیوروں میں سے ایک ابو کلام کا کہنا ہے کہ وہ پہلے ہی بہت کچھ برداشت کر چکا ہے اور اسے گذشتہ مہینوں کے دوران عارضی طور پر اس روزگار کا مکمل نقصان ہونے کا بھی کہا گیا تھا کیونکہ ٹیکسی آفس کے مالک نے ٹیکسوں کو بند کرنے کے حکومتی فیصلے کے بعد اس سے ہونے والے نقصانات کے نتیجے میں اپنا دفتر مکمل طور پر بند کر دیا تھا۔

ایک اور ڈرائیور محسن عواد نے بتایا کہ نقصانات دوگنا ہیں۔ آمدنی میں نقصان کے ساتھ ساتھ انہیں ٹیکسیوں کی ریپئرنگ پر بھی پیسا خرچ کرنا پڑے گا کیونکہ طویل عرصے سے گاڑیوں کے انجن بند ہونے کی وجہ سے انہیں بہت زیادہ نقصان پہنچا ہے جس کا مطلب ہے کہ زیادہ تر ٹیکسی ڈرائیوروں کو آنے والے دنوں میں ٹیکسیوں کو ٹھیک کروانے میں بھی پریشانی کا سامنا کرنا پڑے گا۔

یہ خبر بھی پڑھیں: پرائیویٹ سکولوں میں فیس کم کرنے کا حکم جاری

انہوں نے نشاندہی کی کہ ٹیکسی کاروں کے آپریشن پر عائد نئی شرائط سے آمدنی میں کمی آئے گی لیکن ساتھ ہی یہ ٹیکسیوں کو مکمل طور پر چلانے سے روکنے سے کہیں بہتر ہے۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ مسافر وقت کے ساتھ ساتھ اس صورتحال کے عادی ہوجائیں گے کیونکہ جسمانی دوری کے قواعد آسانی میں ہیں اور مسافروں کی تعداد ایک سے زیادہ تک محدود ہے۔

کچھ ٹیکسی ڈرائیوروں کا کہنا ہے کہ عام طور پر نقل و حرکت کی کمی اور اسکولوں کی بندش کے ساتھ ساتھ سرکاری محکموں کے ملازمین پر عائد پابندیوں کی وجہ سے ان کے لئے گاہک تلاش کرنا مشکل ہوجائے گا اور ٹیکسی ڈرائیوروں کے مابین زبردست مقابلہ پیدا ہوسکتا ہے۔

حوالہ
عرب ٹائمز
پوری خبر پڑھنے کیلئے یہاں کلک کریں شکریہ

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button

آپ اس خبر کو کاپی نہیں کرسکتے ہیں

Open

ایڈ بلاک پتہ چلا

برائے مہربانی ایڈ بلاک کو بند کریں شکریہ