کویت

کویت نے ڈیجیٹل سول آئی ڈی متعارف کرا دیا

کویت سٹی 07 جولائی: روزنامہ الأنباء کی رپورٹ کے مطابق کویت نے سرکاری طور پر ڈیجیٹل سول ID کی منظوری دے دی ہے۔

تفصیلات کے مطابق نائب وزیراعظم وزیر داخلہ اور وزیر مملکت برائے کابینہ امور انس الصالح نے آج ایک فیصلہ جاری کیا جس میں “کویت موبائیل آئی ڈی” ایپلیکشن کے ذریعے حاصل کردہ ڈیجیٹل سول آئی سرکاری اور غیر سرکاری اداروں میں لین دین کے معاملات کے لئے استعمال کرنے کی منظوری دے دی جس کے نتیجے میں حکومتی اور غیر حکومتی اداروں میں کوئی بھی فرد اپنی شناخت کے لئے ڈیجیٹل سول آئی ڈی کا استعمال کرسکتا ہے۔

View this post on Instagram

أنس الصالح يصدر قراراً باعتماد البطاقة المدنية الرقمية في تعريف هوية الفرد بكافة المعاملات الحكومية وغير الحكومية . . . أصدر نائب رئيس مجلس الوزراء وزير الداخلية ووزير الدولة لشؤون مجلس الوزراء، أنس الصالح، قرارا باعتماد البطاقة المدنية الرقمية الصادرة من خلال تطبيق «هويتي» وذلك في تعريف هوية الفرد في كافة المعاملات الحكومية وغير الحكومية. كما جاء في القرار بأن تطبيق «هويتي» يتيح الدخول الآمن للخدمات الإلكترونية الحكومية وغير الحكومية والتوقيع المعتمد للمعاملات والمستندات والوثائق الإلكترونية. ويتعين تجديد البطاقة المدنية المنتهية الصلاحية وذلك لتفعيل الخدمات المتاحة في تطبيق «هويتي». ويعمل بالقرار اعتبارا من تاريخ نشره في الجريدة الرسمية وعلى الجهات المختصة تنفيذه كل فيما يخصه. #وزارة_الداخلية #انس_الصالح #جريدة_الانباء #الانباء_اخر_الاخبار #الانباء_انستغرام

A post shared by جريدة الأنباء الكويتية (@alanbanews) on

پبلک اتھارٹی فار سول انفارمیشن (پی اے سی آئی) نے قبل ازیں ایک آن لائن سول آئی ڈی ایپ “کویت موبائل آئی ڈی” لانچ کی تھی جس کے استعمال سے شہری اور تارکینِ وطن اپنے سمارٹ فونز پر اپنا سول شناختی کارڈ لے سکتے ہیں تاہم سرکاری طور پر اسکے استعمال کی منظوری حاصل نہیں تھی۔

فیصلے میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ “کویت موبائل آئی ڈی” کا اطلاق سرکاری اور غیر سرکاری الیکٹرانک خدمات تک محفوظ رسائی اور کسی بھی الیکٹرانک لین دین کے لئے منظور شدہ دستخط کے طور پر فراہم کیا جا سکے گا۔

یاد رہے کہ معیاد ختم ہونے والے سول کارڈ کی تجدید لازم ہے تاکہ “کویت موبائل آئی ڈی” کی ایپلیکیشن پر موجود خدمات کا فائدہ حاصل کیا جائے۔

پوری خبر پڑھنے کیلئے یہاں کلک کریں شکریہ

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button

آپ اس خبر کو کاپی نہیں کرسکتے ہیں

ایڈ بلاک پتہ چلا

برائے مہربانی ایڈ بلاک کو بند کریں شکریہ