کویت

حج 2020 دوسرے ممالک کے لیے روک دیا گیا

مکہ مکرمہ 23 جون: سعودی گیزٹ کے سوشل میڈیا ٹویٹ کے مطابق سعودی عرب نے پہلے سے مملکت سعودی عرب میں مقیم مختلف قومیتوں سے تعلق رکھنے والے عازمین کو بہت محدود تعداد کے ساتھ حج کرنے کی اجازت دے دی جبکہ دنیا میں موجود دوسرے ممالک سے عازمین اس سال حج نہیں کر پائیں گے۔

وزارت حج و عمرہ نے آج مندرجہ ذیل بیان جاری کیا:

کورونا وائرس COVID19 پوری دنیا کے 180 سے زیادہ ممالک میں پھیل چکا ہے۔ کوویڈ 19 سے متعلق اموات عالمی سطح پر قریب آدھے ملین اور تصدیق شدہ 70 لاکھ سے زیادہ واقعات تک پہنچ چکی ہیں۔

سعودی وزارت صحت کی سفارشات کے مطابق کرونا وائرس سے لاحق خطرات میں مزید اضافہ متوقع ہے جبکہ اس بیماری سے متاثرہ افراد کے لئے ابھی تک کوئی ویکسین دستیاب نہیں ہے۔ عالمی صحت کے بین الاقوامی اداروں اور تنظیموں کی طرف سے جاری کردہ رپورٹس کی بنیاد پر خاص طور پر دنیا بھر میں کیسوں کی تعداد میں اضافے کے ساتھ عالمی سطح پر صحت کو محفوظ رکھنے کی ضرورت ہے۔ کورونا وائرس پھیلنے کے خطرات سے بچنے کے لئے بھیڑ اور رش والے علاقوں میں مناسب فاصلہ برقرار رکھنا مشکل ہے لہذا مملکت سعودی عرب جس کی اولین ترجیح یہ ہے کہ وہ مسلمانوں کو حج یا عمرہ کی ادائیگی محفوظ طریقے سے ادا کرنے کے قابل بنائے۔ کوویڈ 19 کے آغاز سے ہی حجاج کرام کی حفاظت کے لئے سخت احتیاطی اقدامات اٹھائے گئے ہیں۔ سعودی عرب نے اپنی سرزمین پر حجاج کرام کی دیکھ بھال کرتے ہوئے عمرہ زائرین کے داخلے کو فوری طور پر معطل کردیا۔ اس فیصلے کو اسلامی اور بین الاقوامی تنظیموں کی طرف سے متعدد منظوری ملی۔ عالمی سطح پر وائرس سے لڑنے اور مہلک بیماری کے پھیلاؤ کو محدود کرنے میں صحت کی تنظیموں کی کوششوں کی حمایت کرنے میں مؤثر طریقے سے کردار ادا کیا۔

چونکہ کوویڈ 19 کے معاملات عالمی سطح پر بڑھتے ہی جارہے ہیں جبکہ کورونا وائرس کے خطرات بھیڑ والی جگہوں پر پھیل چکے ہیں اور ان ممالک کے لئے خطرات ابھی بھی موجود ہے۔ اس سال حج 1441 ہجری میں صرف سعودی عرب میں مقیم تمام قومیت کی ایک محدود تعداد کو حج کی ادائیگی کی اجازت دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ یہ فیصلہ حج کو محفوظ طریقے سے انجام دینے کے لئے لیا گیا ہے جبکہ مسلمانوں کی حفاظت کے لئے تمام حفاظتی اقدامات کا عہد کرتے ہوئے اور ہماری صحت اور حفاظت کے تحفظ میں اسلام کی تعلیمات پر سختی سے عمل پیرا ہے۔

دو مقدس مساجد کی متولی حکومت کو سالانہ لاکھوں حج اور عمرہ زائرین کی خدمت کرنے پر اعزاز حاصل ہے۔ اس نے تصدیق کی ہے کہ یہ فیصلہ اپنے وطنوں کو واپس روانہ ہونے تک اپنی سرزمین پر حجاج کرام کی حفاظت کو برقرار رکھنے کی مستقل دیکھ بھال کے بارے میں غور و فکر میں ہے۔

اللہ تعالٰی سے دعا ہے کہ وہ تمام ممالک کو اس وبائی امراض سے محفوظ رکھے اور تمام انسانوں کو محفوظ و سلامت رکھے۔ ” آمین

پوری خبر پڑھنے کیلئے یہاں کلک کریں شکریہ

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button

آپ اس خبر کو کاپی نہیں کرسکتے ہیں

ایڈ بلاک پتہ چلا

برائے مہربانی ایڈ بلاک کو بند کریں شکریہ