بلاگ

کویت: شرق جانا چاند پر جانے سے زیادہ مشکل ہو گیا

کویت اردو نیوز 04 اکتوبر: شرق سے زیادہ چاند پر جانا زیادہ آسان ہو گیا، پارکنگ کی جگہ تلاش کرنے میں وقت کا ضیاع ہونے لگا۔

روزنامہ الرای کی رپورٹ کے مطابق کویت سٹی کے کچھ حصوں میں کار کھڑی کرنے کے لئے جگہ کا حصول روزانہ کا عذاب بن گیا ہے خاص طور پر دارالحکومت کا مرکز سمجھے جانے والے ’پرانے کویت‘ کے علاقے “شرق” جو 3،030 مربع کلومیٹر کے رقبے پر پھیلا ہوا ہے اور کویت کی معیشت کو تشکیل دینے میں نمایاں کردار ادا کرتا ہے کیونکہ اس میں اہم کمپنیوں اور بینکوں کے ہیڈ کوارٹرز واقع ہیں نیز ہوٹلوں اور کمپلیکسوں کے ساتھ ساتھ بڑی کاروباری سرگرمیوں کا بھی مرکز ہے اور اس رش کی وجہ سے کاروبار کی سرگرمیاں روکنے کا خدشہ ہے۔

یہ کہانی ہر صبح شروع ہوتی ہے جسے کویت کے مصروف ترین علاقے میں کچھ کارکنوں نے بتایا ہے کہ “پارکنگ کی جگہ حاصل کرنے سے چاند تک جانا آسان ہوگیا ہے” کیونکہ یہ علاقہ لینڈ مارک سے بھرا ہوا ہے جو کہ کاروباری سرگرمیوں کے لئے ناگزیر ہے۔ بہت سے لوگوں نے شکایت کی ہے کہ کار کھڑی کرنے کے لئے جگہ ڈھونڈنے میں وقت ضائع ہوجاتا ہے اور وہ بہت سے فلک بوس عمارتوں پر الزام عائد کرتے ہیں کہ وہ گاڑیوں کو کھڑی کرنے کے لئے کافی جگہ فراہم نہیں کر رہی ہیں خاص طور پر اپنے ملازمین کے لئے جبکہ ایسٹ انڈسٹریل ایریا دکانوں سے بھرا ہوا ہے جس میں لوہار ، کار کی مرمت کے گیراج اور کچھ کار اسپیئر پارٹس فروخت کرنے والے شامل ہیں جو لوگوں کی پریشانیوں میں اضافہ کرتے ہیں۔

شرق میں جانے والے بہت سارے علاقے جن میں قبلہ ، مرقب اور دسمان شامل ہیں جہاں کے مقامی لوگ تیل کی کھوج سے پہلے سے رہ رہے ہیں کو کام یا خریداری کرنے کے لئے اپنی کاریں کھڑی کرنے کے لئے جگہیں نہیں مل پاتی ہیں اور انہوں نے متعلقہ اتھارٹی سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ ایسی عمارتوں پر کنٹرول سخت کریں جو کار پارکنگ کی جگہیں فراہم کرنے میں ناکام ہیں اور قوانین کی پاسداری نہیں کرتی ہیں۔

حوالہ
عرب ٹائمز

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button

آپ اس خبر کو کاپی نہیں کرسکتے ہیں

Open

ایڈ بلاک پتہ چلا

برائے مہربانی ایڈ بلاک کو بند کریں شکریہ